وزیراعظم پاکستان عمران خان کا یوم اقبال کے موقع پر پیغام

وزیراعظم پاکستان عمران خان کا یوم اقبال کے موقع پر پیغام

آج کے دن تمام اہل وطن او رپوری ملت اسلامیہ مفکر اسلام اور شاعر مشرق علامہ محمد اقبالؒ کے یوم پیدائش کے موقع پر اُن کو بھرپور خراج عقیدت پیش کررہی ہے۔
علامہ اقبال ؒنے مسلمانانِ برصغیر کو ایک ایسے وقت میں راستہ دکھایا جب وہ غلامی کے اندھیروں میں منزل کا سراغ کھوچکے تھے۔انکے افکار اور سوچ نے اُمید کا وہ چراغ روشن کیا جس نے نہ صرف منزل بلکہ راستے کی بھی نشاندہی کی۔پاکستان علامہ اقبال ؒکے خواب کی تعبیر ہے۔ 
علامہ اقبال کا شہرہ آفاق کلام دُنیا کے ہر حصے میں پڑھا اور سمجھا جاتا ہے۔انہوں نے ہمیشہ مسلمانوں کو آپس میں اتحاد اور اتفاق کی تلقین کی اور دعوت عمل دی کیونکہ اُن کے نزدیک عمل ہی زندگی ہے۔ یہ اُس دانائے راز کی نگاہِ دوربین تھی کہ انہوں نے برسوں پہلے ان مسائل کی پیش گوئی کی جن کا ہمیں آج بھی سامنا ہے۔ فرقہ واریت، نظریاتی انتہا پسندی اور نئے اجتماعی گروہوں کی تشکیل جیسے معاملات پراقبال ؒ کی سوچ آج بھی ہمارے لیے مشعل راہ ہے۔ شاہین کے تصوراور خودی کے فلسفے کو سمجھ کر اور اس پر عمل پیرا ہونے سے ہی ہم پاکستان کو اقوام عالم میں اسکا اصل مقام دلا سکتے ہیں۔ 
علامہ اقبال ؒ کی فکر سے وابستگی کا یہ تقاضا ہے کہ ہم انکی سوچ کو نہ صرف سمجھیں بلکہ اس پر عمل پیرا ہو کر پاکستان کو حقیقی معنوں میں وہ ریاست بنائیں جس کا تصور علامہ اقبال نے دیا تھا۔موجودہ حالات کا تقاضا ہے کہ ہم فکر ِاقبال کو اپنی زندگیوں میں یوں جاری کریں کہ ہم علم و عمل کا ایک جیتا جاگتا نمونہ بن کر دُنیا کو اپنے کردار کی روشنی سے منور کریں اور اقبال ؒ کے تصورات کے مطابق پاکستان کو ایک ترقی یافتہ اسلامی فلاحی ریاست کے طورپر اقوام عالم میں روشناس کرائیں۔
آج کے دن کی اہمیت کو پیش نظر رکھتے ہوئے میں نے ہدایت کی ہے کہ یوم اقبال پر عام تعطیل کی بجائے برصغیر کے عظیم مفکرکی سوچ اور فکر کو اجاگر کرنے کے لئے حکومتی سطح پر خصوصی پروگرامز کا اہتمام کیا جائے ۔ اس ضمن میں سکولوں ، کالجز اور تعلیمی اداروں میں بھی خصوصی پروگرامز کا انعقاد کیا جائے تاکہ نوجوان نسل کو علامہ اقبال کی سوچ سے روشناس کرایا جا سکے۔