یومِ اقبال کے موقع پر وزیرِ اعظم اسلامی جمہوریہ پاکستان شاہد خاقان عباسی کا پیغام

یومِ اقبال کے موقع پر وزیرِ اعظم اسلامی جمہوریہ پاکستان شاہد خاقان عباسی کا پیغام

علامہ محمد اقبال ہماری فکری روایت کا سب سے روشن حوالہ ہیں۔انہوں نے مسلمانانِ ہند کو ایک ایسے دور میں منزل کا سراغ دیا جب ان کے تہذیبی وجود کو کئی خطرات لاحق تھے۔علامہ اقبال کے افکار نے مایوسی اور نا امیدی کے ماحول میں امید کا وہ چراغ روشن کیا جس نے نہ صرف منزل بلکہ راستے کی بھی نشاندہی کی۔
شاعرِ مشرق نے نہ صرف ایک آزاد اور خود مختار ریاست کا تصور پیش کیا بلکہ اس بات کی بھی نشا ندہی کی کہ ایک جدید اسلامی مملکت کو کیا کیا چیلنج درپیش ہوسکتے ہیں۔علامہ اقبال نے مسلم ریاستوں کویہ راہ دکھائی کہ دورِ جدید کے تقاضوں پر پورا اترنے کے لیے انہیں جمہوری اصولوں کی بنیاد پر اپنی سیاسی تشکیل نو کرنی چاہیے اور جمہوری اقدار سے ہم آہنگ رہتے ہوئے شہریوں کو سیاسی اور سماجی عمل کا حصہ بنا ناچاہیے۔
پاکستان مسلم لیگ ایک ایسے جمہوری پاکستان کے لیے کوشاں ہے جس میں عوام کی بصیرت سے فائدہ اٹھاتے ہوئے اور اُن کی رائے کا احترام کرتے ہوئے ان کے مسائل کا حل تلاش کیا جائے۔ گزشتہ چار سالوں سے مسلم لیگ (ن) کی حکومت اس بات کے لئے کوشاں رہی ہے کہ پاکستان کو دورِ جدید کی ایک ایسی ترقی یافتہ ریاست بنایا جا ئے جو ایک طرف مسلم تہذیبی شناخت کی نگہبان ہو اور دوسری طرف عالمی اخلاقی اقدار کی علم بردار ہو جس میں بلاامتیاز مذہب و رنگ سب کو مساوی حقوق حاصل ہوں۔اس کے لیے ضروری ہے کہ ملک میں امن ہو اور سب کو ترقی کے یکساں مواقع فراہم ہوں۔علامہ اقبال نے ایسی مستحکم مملکت کا خواب دیکھا تھا۔موجودہ حکومت نے دہشت گردی کے خلاف فیصلہ کن جنگ لڑی تاکہ امن قائم ہو۔ملک کی معیشت کو استحکام دیا تاکہ ترقی کے مواقع فراہم ہوں۔مضبوط انفراسٹرکچر دیا تاکہ روزگار پیدا ہو۔
آج ضرورت اس امر کی ہے کہ ہم اجتماعی سطح پر اس خودی کو زندہ کریں جس کا درس اقبال نے دیا تھا۔خودی کی حفاظت سیاسی استحکام اور معاشی خود کفالت کے بغیر نہیں ہو سکتی۔علامہ اقبال کی فکر سے اظہار یکجہتی کا تقاضا ہے کہ سب پاکستانی ایک مستحکم اور خود مختار پاکستان کے لیے یک زبان ہوں اور فسادو انتشار کی قوتوں کے خلاف متحد ہوں۔ علامہ اقبال کی فکر اللہ پر یقین ، پختہ عزم، جہد مسلسل اور حفظ خودی کے اجزاء پر مشتمل ہے۔ یہی اجزاء آج بھی ہماری راہنمائی کرتے اور مستقبل کی طرف بڑھنے کا حوصلہ دیتے ہیں۔

**